207

بڈھر مسجد کا مسئلہ دراصل کمرشل پراپرٹی پر قبضہ کے مسئلےہے،عوامی حلقے،مقامی انتظامیہ سے شفاف انکوائری کی اپیل

تلہ گنگ (اکرم نور چکڑالوی)بڈھر مسجد کا مسئلہ دو پارٹیوں کا مسئلہ ہے نہ کہ یہ کوئی مسلکی مسئلہ ہے ۔ بڈھر مسجد کے معاملے کو مسلکی رنگ دے کر منافرت پھیلانے کی کوشش

کرنے والوں کو شرم آنی چاہے۔معتبر عوامی حلقے ۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ کچھ دنوں سے تلہ گنگ کے گاؤں بڈھر میں مسجد اور کمرشل پراپرٹی پر قبضہ کے مسئلے کے حوالے سے تلہ گنگ کے معتبر عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ بڈھر مسجد کے معاملے کو مسلکی اختلاف کا رنگ دینے والوں کو شرم آنی چاہیے ۔بڈھر مسجد کا مسئلہ دو پارٹیوں کے درمیان مسجد اور مسجد سے ملحقہ کمرشل پراپرٹی کا مسئلہ ہے نہ کہ یہ کوئی مسلکی اختلاف کا مسئلہ ہے مگر کچھ لوگ اس مسئلے کو مذہبی رنگ دے کر ہمارے پر امن تلہ گنگ میں مذہبی اور مسلکی منافرت پھیلا کر تلہ گنگ میں قائم امن و امان کو تباہ کرنا چاہتے ہیں جن کو ایسا کرتے ہوئے شرم آنی چاہیے یہ معاملہ عدالتوں میں زیر سماعت ہے اور عدالتوں کافیصلہ آنے تک کسی بھی قسم کی انتشاری سرگرمی کی مذمت کرتے ہوئے ڈی پی او چکوال ۔اے ایس پی تلہ گنگ اور ایس ایچ اور تھانہ ٹمن سے ایسا کرنے والوں کے خلاف سخت سے سخت کاروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں