308

محکمہ ہائی وے کی مجرمانہ غفلت، تلہ گنگ میانوالی روڈ قاتل بن گیا،130 قیمتی جانیں ضائع جبکہ 373 جسمانی اپاہج، کروڑوں روپے کی گاڑیاں تباہ

لاوہ(حفیظ اﷲ ملک) محکمہ ہائی وے کی مجرمانہ غفلت، تلہ گنگ میانوالی روڈ قاتل بن گیا،130 قیمتی جانیں ضائع جبکہ 373 جسمانی اپاہج، کروڑوں روپے کی گاڑیاں تباہ،محکمہ ہائی وے اور ممبران اسمبلی ٹس سے مس نہ ہوئے،عوام سراپا احتجاج

۔تفصیلات کے مطابق تلہ گنگ میانوالی قاتل روڈ جس پر مانسہرہ، ایبٹ آباد،اٹک،چکوال،اسلام آباد اور راولپنڈی سے کراچی ،ڈیرہ اسماعیل خان،میانوالی،ملتان،تک چلنے والی ہزاروں گاڑیاں نہایت تیز رفتاری سے گزرتی ہیں اور ادھر بھاری بھرکم ٹریلر کی وجہ سے روڈ کی حالت نہایت خستہ ہوچکی ہے لیکن ٹریفک کے رش کی وجہ سے روزانہ حادثات معمول بن گئے ہیں ۔صرف چھے ماہ میں 130 قیمتیں جانیں ضائع ہوگئی ہیں اور373 اشخاص معذور ہوگئے ہیں جبکہ کروڑوں روپے مالیت کی سینکڑوں گاڑیاں تباہ ہو گئی ہیں اور محکمہ ہائی وے کی عدم دلچسپی و مجرمانہ خاموشی سے مزید حادثات کی توقع ہے کیونکہ ابھی تک روڈ کو ون وے کرنے کی پیشرفت نہ ہوسکی ہے۔تلہ گنگ میانوالی روڈ پر دو خطرناک پل جن میں کوٹقاضی اور گھمبیر پل دندہ شاہ بلاول شامل ہیں جو بالکل کھلے پڑے ہیں اطراف کی حفاظتی دیواریں ٹریفک حادثات سے بالکل ختم ہو چکی ہیں آئے روز ان ہی دو جگہوں پر خطرناک حادثات پیش آتے ہیں تاحال کسی بھی پل کو مرمت نہ کیا جا سکا ہے۔ عوامی حلقوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب،وزیر اعظم پاکستان سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ ہم مزید جنازے اٹھانے سے قاصر ہیں لہٰذا بالکسر تا میانوالی تک روڈ کو ون وے کیا جائے بصورت دیگر تلہ گنگ میانوالی روڈ پر احتجاجی دھرنادیا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں