212

ہم نماز پڑھتے ہیں ، حج ادا کرتے اور زکوۃ بھی دیتے ہیں لیکن پھر بھی ہم اللہ کی معرفت سے دور ہیں بے شک اللہ شہ رگ کے قریب ہے لیکن آج ہم اللہ سے دور ہیں، بانی امیر حضرت محمد ظفر منصور

چکو ال (نمائندہ بے نقاب) عالمی روحانی جماعت کاروان ناجیہ کے بانی امیر حضرت محمد ظفر منصور نے کہا ہے کہ آج ہم نماز پڑھتے ہیں ، حج ادا کرتے اور زکوۃ بھی دیتے ہیں لیکن پھر بھی ہم اللہ کی معرفت سے دور ہیں بے شک اللہ شہ رگ کے قریب ہے

لیکن آج ہم اللہ سے دور ہیں جس طرح انسان اپنا چہرہ قریب ہونے کے باوجود بغیر آئینہ نہیں دیکھ سکتا اسی طرح اللہ کی معرفت اور رسائی کے لیے انبیاء، صلحا، صدیقین کا وسیلہ ضروری ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے سالانہ اجتماع کے ہزاروں معتقدین سے خطاب کرتے ہوئے کہا، شرکاء اجتماع ولولہ انگیز انداز میں ان کا روحانی اور فکر انگیز خطاب سنتے دکھائی دیئے انہوں نے مزید کہا کہ جس کو اپنے نفس کی پہچان نہیں وہ رب العالمین کی پہچان نہیں کر سکتا اور یہ کہ قرآن کے حروف عالم کی آنکھوں میں الفاظ زبان میں، علم دماغ میں اور تاثیر قلب میں ہے ، بے شک حضرت محمد ؐ کے چہرہ انور میں جلوہ خدا نظر آتا ہے حضرت محمد ظفر منصور نے رقت انگیز انداز میں مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ میں امت مصطفے کو توڑنے نہیں جوڑنے آیا ہوں ، عاشقان مصطفے ؐ جھوٹے نہیں ہوتے بلکہ عاشقان مصطفے ؐ مردہ دلوں کو زندہ کرتے ہیں انہوں نے یہ بھی کہا کہ اللہ رب العزت فرماتے ہیں کہ جو میرے دوستوں سے حسد کرے میرا اس کے ساتھ اعلان جنگ ہے انہوں نے مزید کہا کہ آسمان ، زمین ، چاند اور تاروں کا نور حقیقت میں نور مصطفے ؐ سے اور نور مصطفے ؐ نور خدا سے ہے، اس اجتماع میں مقامی رکن قومی اسمبلی حاجی نذیر سلطان ، رکن صوبائی اسمبلی خالد غنی کے علاوہ سیاسی و سماجی شخصیات نے شرکت کی، سالانہ روحانی اجتماع میں ہزاروں کی تعداد میں مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی ، اس بڑے اجتماع کی خاص بات یہ بھی تھی کہ پنڈال میں جگہ کم پڑ گئی اور سینکڑوں لوگوں نے سڑک پر کھڑے ہو کر بانی و سرپرست کاروان ناجیہ کا خطاب سنا ، حضرت محمد ظفر منصور نے شورکوٹ سے اجتماع کے بعد حضرت سخی سلطان باہو ؒ کے دربار پر حاضری دی جہاں پر موجود دربار انتظامیہ نے ان کا پر جوش استقبال کیا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں