259

لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بینچ کے جسٹس عباد الرحمن لودھی نے میٹرک کے سالانہ امتحانات کے انگلش اور فزکس کے دو پیپرز کا دوبارہ امتحان لینے کے راولپنڈی بورڈ کے فیصلے کوکالعدم قرا ر،

چکوال( نمائندہ بے نقاب) لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بینچ کے جسٹس عباد الرحمن لودھی نے میٹرک کے سالانہ امتحانات کے انگلش اور فزکس کے دو پیپرز کا دوبارہ امتحان لینے کے راولپنڈی بورڈ کے فیصلے کوکالعدم قرا ردے دیا۔عزہ بتول اور والدین نے راولپنڈی بورڈ کیخلاف

دائر کی جانے والی رِٹ میں موقف اختیار کیا کہ انگلش اور فزکس کے دو پیپرز اس وجہ سے ختم کر دیے گئے ہیں کہ ایک گروپ کے پیپر میں شام کے گروپ والا پیپر تقسیم کیا گیا جبکہ شام کے گروپ میں صبح کے گروپ والا پیپر تقسیم ہوا ، لہٰذا یہ تاثر دینا کے پیپر آؤٹ ہوگیا ہے درست نہیں ہے۔ لہٰذا پرچہ آؤٹ نہیں ہوا اس لیے بورڈ کی طرف سے دوبارہ امتحان لینے سے ہزاروں لائق اور ذہین بچوں کا مستقبل خطرے میں پڑ گیا ہے کیونکہ اب دوبارہ بورڈ نے ان دونوں پیپرز کے امتحان کی تاریخ چار اور پانچ اپریل مقرر کی ہے اور اتنے تھوڑے عرصے میں دوبارہ تیاری کرنا مشکل ہے۔ والدین کی طرف سے بیرسٹر چوہدری عمران علی افراسیاب نے پیروی کرتے ہوئے دلائل دیے کے بورڈ کا فیصلہ بچوں کے مستقبل پر اثر انداز ہوگا۔ فاضل جج نے دلائل سننے کے بعد رٹ منظور کرتے ہوئے دوبارہ بورڈ کی طرف سے پیپر لینے کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں