192

لاوہ تحصیل بھر میں سرکاری عمارات کی خستہ حالی محکمانہ سستی ، کئی شعبہ کی عمارات اپنی مدت حیات پوری کر چکی ہیں

لاوہ(نمائندہ بے نقاب)لاوہ تحصیل بھر میں سرکاری عمارات کی خستہ حالی محکمانہ سستی ،نااہلی اور غفلت کا منہ بولتا ثبوت ہیں ۔لاوہ ،چکی شیخ جی ،چنگا،گوہل کے علاوہ کئی علاقوں میں سر کاری عمارات جن میں ہسپتال ،سکول کے سمیت کئی شعبہ کی عمارات اپنی مدت حیات پوری کرچکی ہیں ۔ لاوہ رورل ہیلتھ سنٹر میں سرونٹ کوارٹر،شفاخانہ حیوانات میں ڈاکٹر کی رہا ئش کے علاوہ جدید افزائش نسل کشی کے کوارٹرآہستہ آہستہ ختم ہورہے ہیں۔دروازے تقریبا ختم ہوگئے ہیں

۔گوہل میں گرلزپرائمری سکول کی عمارت کوتمام سرکاری آفسران خطرنا ک قرار دے چکے ہیں۔جبکہ بنیادی ہیلتھ سنٹر کے سرونٹ تمام بارشوں کی نظر ہوچکے ہیں ۔مگر محکمانہ غفلت نے اس پر توجہ نہ دینے دی۔ چنگامیں تین سکول تعداد کم ہونے کی وجہ سے دوسرے سکولوں میں ضم کردئیے گئے۔ ان کی عمارات لاوارث قرار دی جاچکی ہیں۔ چکی شیخ جی میں ڈسپنسر ی کو عرصہ سے تالے لگا کر محکمہ آذاد ہوگیا۔ اس کی عمارت بھی خالی پڑی ہے ۔گورنمنٹ پرائمری سکول ڈھوک چونتری اس سکول کی بدقسمتی کہ آج تک محکمہ نے اسے ہینڈ اوور نہیں کیا ۔عمارت بنوا کر اس میں کلاسوں کا اجراء نہ کیا جاسکا۔ کھڑکیا ں دروازے عوام لے گئے یا جہازوں کے نشے کے کام آگئے ۔لاوہ دندہ روڈ پر گرلز ہاسٹل 20 سال قبل تعمیر کیا گیا مگر اس میں بھی اتنی کرپشن ہوئی کہ اس کو نامکمل چھوڑ کر ٹھیکدار بھی غائب ہو گے اور جاتے جاتے حساب بھی چکتا کر گیا۔لیکن آج عمارت آج بھی محکمہ کی بے حسی ،نااہلی اورغفلت پر آنسو بہا رہی ہے۔ ہر سال کروڑوں روپے فنڈ کہا ں جارہے ہیں۔ شاید حکومت نے ملک کو تباہ کرنے کا پورا پورا انتظام کیا ہوا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں