292

پرانے حلقہ پی پی 22کے لیگی راہنماؤں نے چکوال کی نئی حلقہ بندیوں کے خلاف درخواستیں دائر کر دی، مذکورہ حلقہ بندیوں غیر فطری اور غیر منصفانہ ہیں

چکوال( نمائندہ بے نقاب ) پرانے حلقہ پی پی 22کے لیگی راہنما چیئرمین یونین کونسل وروال سردار عامر عباس اور علاقہ ونہار کے لیگی راہنما سابق ممبر ضلع کونسل راجہ غلام عباس نے راجہ رضوان عباسی ایڈووکیٹ ہائی کورٹ کے ذریعے سینکڑوں کارکنوں کے ہمراہ الیکشن کمیشن اسلام آباد میں

چکوال کی نئی حلقہ بندیوں کے خلاف درخواستیں دائر کر دی۔ان کا موقف ہے کہ مذکورہ حلقہ بندیوں غیر فطری اور غیر منصفانہ ہیں۔اور ہزاروں ووٹروں کی امنگوں کا خون کر دیا گیا ہے۔اور ووٹروں کے منشا کے مطابق حق راہ دیہی استعمال کرنے سے روک کر انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بھی کی گئی ہیں۔جبکہ قبل ازیں چیئرمین سردار عامر عباس کی قیادت میں حلقہ پی پی 22کے عوام احتجاجی جلسہ اور احتجاجی ریلی اور جگہ جگہ احتجاجی بینرز لگا کر اپنا احتجاج ریکارڈ کرا چکے ہیں۔جبکہ سردار عامر عباس اور راجہ غلام عباس نے حلقہ پی پی 22کے لیگی کارکنوں ووٹروں،سپورٹروں اور عوام سے رابطہ مہم تیز کر دی ہیں۔دونوں راہنماؤں نے میڈیا کو بتایا کہ نئی حلقہ بندیاں نہ صرف حلقہ پی پی 22بلکہ چاروں صوبائی اسمبلیوں کے عوام سختی سے مسترد کر چکے ہیں۔انہوں نے مزید بتایا کہ ہم نے عوام کو صبرو تحمل کا مظاہرہ کرنے کی اپیل کر رکھی ہے۔جبکہ اگر عوام کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو گیا تو وہ احتجاج کا دائرہ وسیع کرتے ہوئے موٹروے کو بھی بلاک کر سکتے ہیں۔ادھر مسدقہ اطلاعات کے مطابق حکومت نئی حلقہ بندیوں کو پرانی شکل میں برقرار رکھنے کے لیے اسمبلیوں میں قانون سازی کرنے کے لیے پر تول رہی ہے۔اگر اسمبلیوں میں نئی حلقہ بندیوں کے خلاف بل پاس کرا لیا جاتا ہے تو پھر الیکشن کمیشن مسائل کا شکار ہو سکتا ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں