225

کشمیر اور فلسطین میں جاری مظالم اور افغانستان میں معصوم حفاظ پر بمباری ،ملک بھر کی طرح تلہ گنگ اور لاوہ میں یوم احتجاج

تلہ گنگ ( نمائندہ بے نقاب) قائد جمعیت مولانا فضل الرحمٰن کال پر کشمیر اور فلسطین میں جاری مظالم اور افغانستان میں معصوم حفاظ پر بمباری اور اس پراقوام متحدہ اور عالمی انسانی حقوق کی تنظیموں کی مجرمانہ خاموشی کے خلاف ملک بھر کی طرح تلہ گنگ اور لاوہ میں یوم احتجاج منایا گیا ،نماز جمعہ کے اجتماعات میں علماء اکرام نے کشمیر اور فلسطین میں جاری مظالم اور افغانستان میں معصوم حفاظ پر بمباری اور اس پراقوام متحدہ اور عالمی انسانی

حقوق کی تنظیموں کی مجرمانہ خاموشی کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ قندوز مدرسہ پرحملہ دنیا کے امن اور تعلیم پر حملہ ہے،معصوم کلیوں کو کچل کرظلم کی انتہا کر دی گئی۔تکمیل قرآن کی بابرکت تقریب پر بارود کی بارش انسانیت اور انسانی حقوق کی تذلیل ہے ،اقوام متحدہ اور عالمی برادری دہرے معیار کا خاتمہ کرے نہتے اور بے گناہ شہریوں پربمباری انسانیت دشمنی کی بدترین مثال ہے اسکی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ اور افغانستان کے نہتے اور معصوم حفاظ کی دستاربندی کی تقریب کے دوران وحشیانہ فضائی بمباری کا کوئی اخلاقی جواز نہیں۔ انہوں نے کہا کہ شہداء کے لواحقین میں لامحالہ امریکہ اور افغانستان کیخلاف شدید نفرت اور جارحانہ ردِعمل پیدا ہوگا اور ممکنہ دہشتگردی کا لیبل لگا کر معصوم لوگوں کے قتل عام سے امریکہ خطے میں دہشتگردی کا نیا سلسلہ شروع کرنا چاہتا ہے۔انہوں نے کہا کہ معصوم مسلمان بچوں پر فضائی حملہ صدر ٹرمپ کی ظالمانہ سٹریٹجک پالیسی اور اسلام دشمنی کی عکاسی کرتا ہے۔علماء اکرام نے اقوام عالم اور اوآئی سی سے اپیل کی ہے کہ وہ دہشتگردی کے شکار اِن مظلوموں کے لئے آواز اٹھائیں ورنہ دہشتگردی کا یہ سلسلہ مزید دوسرے ملکوں کو بھی اپنی لپیٹ میں لے سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حیرت ہے کہ جانوروں کے حقوق کے علمبردار مغربی اقوام نہتے اور معصوم عوام کے قتل عام پر خاموش کیوں ہیں؟ علماء اکرام کا کہنا تھا کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیرمیں نہتے کشمیروں پر ظلم وبربریت کی انتہا کر دی ہے ، عالمی برادرای خاموش تماشائی بنائی ہو ئی ہے، انسانی حقو ق کی نام نہاد تنظیموں کے لیے شر م سے ڈوب مرنے کامقام ہے ، مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے عالمی سطح پر سنجیدگی سے کوششیں نہیں کی گئیں، ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ عالمی برادری بھارتی دہشت گردی کا فوری نوٹس لے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں