340

سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کے دس مئی کے جلسے کی تیاریاں زور پکڑنا شروع ہو گئی، سردار غلام عباس کو بھی ماڈل ٹاؤن لاہور میں ہونے والی ملاقات کے دوران گرین سگنل دے دیا گیا

چکوال ( نمائندہ بے نقاب) سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کے دس مئی کے جلسے کی تیاریاں زور پکڑنا شروع ہو گئی ہیں ، ضلع چکوال کے تمام پارلیمنٹرنیز پوری طرح سے متحرک ہو چکے ہیں جبکہ سردار غلام عباس کو بھی ماڈل ٹاؤن لاہور میں ہونے والی ملاقات کے دوران گرین سگنل دے دیا گیا ہے اس حوالے سے ایم پی اے چوہدری سلطان حیدر علی کی رہائش گاہ پر تمام پارلیمنٹرنیز اور سردار غلام عباس اکٹھے بیٹھ بھی چکے ہیں مگر ابھی تک اتفاق

اور اتحاد کی خوشبو دور دور تک دکھائی نہیں دیتی ، چہرے اور باڈی لینگویج بتا رہی ہے کہ سب مجبوری کے سودے ہیں ، کل تک ایک دوسرے کے خلاف بیان بیازی اور لتے لینے والے کس طرح ایک دوسرے کے سامنے بیٹھے ہیں ، ضلع چکوال کے تمام پارلیمنٹرنیز اور سیاسی عمائدین کا گذشتہ 32سالہ سیاسی جائزہ لیا جائے تو یہاں پر سیاسی وفاداریاں تبدیل کرنا نہ کوئی جرم ہے نہ کوئی احساس ندامت ، سردار اور اینٹی سردار سیاست کرنے والے بھی جنرل پرویز مشرف دور میں لڑکھڑا گئے بزرگ مسلم لیگی راہنما جنرل عبدالمجید ملک نے اپنے سب سے بڑے مخالف سردار غلام عباس ہاتھ ملا کر اپنے داماد اور بھتیجے کی 2002ء کے الیکشن میں نشست پکی کی حالانکہ 2001ء کے ضلعی حکومتوں کے انتخابات میں جنرل مجید ملک کے خلاف شدید رد عمل سامنے آیا تھا پھر پرویز مشرف کی چھتری تلے بھر پور سیاست کرنے والے سردار غلام عباس نے پہلے مسلم لیگ ق کو چھوڑا ، پی ٹی آئی میں گئے وہاں سے واپسی ہوئی اور اب مسلم لیگ ن میں ہیں مگر مسلم لیگ ن میں بھی ان کے موڈ اور مزاج کے مطابق صورتحال سامنے آتی دکھائی نہیں دے رہی ، واقفان حال بتاتے ہیں کہ اصولی طور پر 2013ء والا سیٹ اپ ہی برقرار رکھنے کی نشاندہی کی جا رہی ہے بحرحال یہ بھی ایک تلخ حقیقت ہے کہ سردار غلام عباس ضلع چکوال کی سب سے بڑی سیاسی و انتخابی قوت ہیں اور ان کو نظر انداز کرنا کوئی دانشمندانہ اقدام نہیں ہو گا بحرحال آنے والے دنوں میں صورتحال بڑی تیزی کے ساتھ تبدیل ہو گی مسلم لیگ ن کے اوپر کڑا وقت آنے والا ہے اور اس کڑے وقت میں کون نوا ز شریف کے ساتھ کھڑا ہو گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں