289

ریسکیو 1122 کی کارکردگی سوالیہ نشان، لاکھوں روپے تنخواہوں اور ٹی اے ڈی اے کی مد میں وصول کرنی والی ریسکیو 1122 آخر کس مرض کی دوا۔ملک غلام محمد

تلہ گنگ(نمائندہ بے نقاب ) یونین کونسل جھاٹلہ کے چیئرمین ملک غلام محمد اور معززین علاقہ نے ریسکیو 1122 کی کارکردگی پر سوالات اٹھاتے ہوئے تھوہا محرم خان ڈیم میں ڈوب کر جاں بحق ہونے والے نوجوان محمد قدیر کی لاش نکالنے میں ناکامی پر ریسکیو1122 ٹیم کے خلاف انکوائری کا مطالبہ کر دیا ۔

چیئرمین ملک غلام محمد اور دیگر معززین علاقہ نے میڈیاسے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ قبل ازیں بھی تین واقعات میں ڈیمز میں ڈوب کر جاں بحق ہونے والے افراد کی لاشیں نکالنے کے لئے موقع پر پہنچنے والی ریسکیو 1122 کی ٹیم ہاتھ باندھ کر ڈیم کے پاس کھڑی ہو جاتی ہے ۔ باز پرس پر وسائل نہیں ہیں کا راگ الاپتی رہتی ہے ۔ ہر بار مقامی تیراک اپنی جان ہتھیلی پر رکھ کر ڈوب جانے والے افراد کی لاشیں نکالتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ لاکھوں روپے تنخواہوں اور ٹی اے ڈی اے کی مد میں وصول کرنی والی ریسکیو 1122 آخر کس مرض کی دوا ہے ۔ جائے حادثہ پر فوٹو سیشن سے عوام اور حکومت کی آنکھوں میں دھول جھونکی جا رہی ہے ۔ انہوں نے حکومت پنجاب سے اس معاملے کی تحقیقات کرنے اور ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں