365

نواز شریف بھارتی ایجنٹ ہے غداری کا مقدمہ چلایا جائے،نواز شریف کو ووٹ دینا یزید کے ساتھ بیعت کرنے کے مترادف ہے۔فوزیہ بہرام

تلہ گنگ(نمائندہ بے نقاب) پاکستان تحریک انصاف یوتھ ونگ یونین کونسل بھلومار کے زیراہتمام لاری اڈہ چینجی پر شمولیتی پروگرام کا انعقاد کیا گیا۔ جس میں پاکستان تحریک انصاف شمالی پنجاب کے ڈپٹی جنرل سیکرٹری ملک یاسر پتوالی، سابق ممبر ضلع کونسل ملک فدا حسین، تحریک انصاف کی

خاتون رہنما محترمہ فوزیہ بہرام، تحریک انصاف یوتھ ونگ ضلع چکوال کے صدر احسن زاہد، یوتھ ونگ ضلع چکوال کے جنرل سیکرٹری چوہدری محسن وروال، چوہدری ذکااللہ اور مقامی قائدین و کارکنان کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ تقریب میں سابق ناظم یونین کونسل بھلومار میاں عبدالعزیز مرحوم کے صاحبزادے میاں عمیرالعزیز بھٹی مسلم لیگ ن کو چھوڑ کر باضابطہ طور پر تحریک انصاف میں شامل ہوئے۔ جبکہ دیگر شامل ہونے والوں میں شیراز افضل ن لیگ، ملک فہیم ن لیگ، عابد حسین ملنگ پیپلز پارٹی اور جماعت اسلامی یونین کونسل بھلومار یوتھ ونگ کے سابق صدر جنید اقبال بھٹی شامل تھے۔تقریب میں سابق وزیراعظم میاں نواز شریف کی طرف سے پاکستان مخالف بیانات پر مذمتی قرارداد بھی پیش کی گئی جس میں اداروں سے مطالبہ کیا گیا کہ میاں نواز شریف کو قانون کے کٹہرے میں لایا جائے اور ان کے خلاف غداری کا مقدمہ چلایا جائے۔ ملک فدا حسین نے کہا کہ 2018 کا الیکشن تحریک انصاف کا ہے عمران خان کو وزیراعظم بنا کر رہیں گے۔ محترمہ فوزیہ بہرام نے میاں نواز شریف کو فاسق و فاجر قرار دیتے ہوئے کہا کہ نواز شریف بھارتی ایجنٹ ہے۔جو بھارت کا دوست ہے وہ ہمارا دشمن ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ نواز شریف کو اس سے قبل ملک کی سب سے بڑی عدالت جھوٹا اور بددیانت قرار دے چکی ہے۔ ان حالات میں نواز شریف کو ووٹ دینا یزید کے ساتھ بیعت کرنے کے مترادف ہے۔ ملک یاسر پتوالی نے کہا کہ اس دھرتی میں عمران خان سے بڑا لیڈر کسی ماں نے جنم ہی نہیں دیا۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان کو ایک بار وزیراعظم بنانے تک ان کیلئے ووٹ مانگوں گا۔ اقتدار میں آنے کے بعد انہیں اپنی کارکردگی کی بنیاد پر الیکشن لڑنا ہوگا۔ اگر کارکردگی نہ دکھا سکے تو عمران خان کی مخالفت میں تمام کارکنوں کے ساتھ کھڑا ہوں گا۔ ملک یاسر پتوالی نے مزید کہا کہ تحریک انصاف میں نئے شامل ہونے والے یہ بات ذہن نشین کرلیں کہ تحریک انصاف میں جاگیردارانہ نظام نہیں چلے گا۔ نظریاتی کارکنوں اور جاگیرداروں کو برابر اہمیت ملے گی۔ عمران خان کی سیاست پر تنقید کرنے والے آج شمولیت کیلئے ان کے دروازے پر قطار میں کھڑے انتظار کررہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں