269

حکومت کا صاف دیہات پروگرام بری طرح ناکا م،کروڑوں روپے کاماہانہ فنڈ کھوہ کھاتے ،عوامی حلقوق کی طرف سے صاف دیہات پروگرام کو تصاویری مہم کا نام۔

تلہ گنگ (شاہ نواز جھابری)حکومت کا صاف دیہات پروگرام بری طرح ناکا م،کروڑوں روپے کاماہانہ فنڈ کھوہ کھاتے، ڈی سی چکوال اور چیر مین طارق اسلم ڈھلی کی ناک کے نیچے کرپشن کا بازار گرم،عوامی حلقے سراپا احتجاج،

تفصیلات کے مطابق تلہ گنگ،ٹمن اور لاوہ کے دیہاتوں میں حکومت کی طرف سے شروع ہونے والا صاف دیہات پروگرام بری طرح ناکام ہو گیا۔دیہاتوں میں صفائی کے نام پر فرضی خانہ پریاں کی جانے لگیں ہیں۔ جس کی وجہ سے ماہانہ کروڑوں روپے کے فنڈ صاف دیہات پروگرام کے نام پر خرد برد کئے جانے کے امکانات روشن ہو گئے ہیں۔ ناکام صفائی کے بعد بھی کوڑا کرکٹ کے ڈھیر اور گندگی کی وجہ سے متعدد گلیاں نالیاں ابھی بھی بند ہیں،متعدد یونین کونسل سیکرٹریوں،چیرمینوں،وائس چیرمینوں اور کونسلروں کی طرف سے عوام میں پزیرائی حاصل کرنے کے لئے ناکام صفائی مہم کی تصوایرں شوشل میڈیا ڈال دینے سے عوامی حلقے نے صاف دیہات پروگرام کوشوسل میڈیا تصاویری مہم کا نام دے رکھا ہے، عوامی حلقوں کا اعلی حکام ، ڈی سی چکوال اور ڈسٹرک چیر مین طارق اسلم ڈھلی سے فورا نوٹس لینے کا مطالبہ۔روز نامہ خبریں کے خصوصی سروے کے دوران عوامی حلقوں نے صاف دیہات پروگرام کو خوب آڑے ہاتھوں لیا،میڈیا سے گفتگو کرتے ہو عوامی حلقوں کا کہنا تھا کہ حکومت کی طرف سے صاف دیہات پروگرام شروع کرنا خوش آئندہ اقدام ہے،لیکن چیرمینوں،وائس چیرمینوں ،کونسلروں یونین کونسلوں کے سیکرٹریوں کی وجہ صاف دیہات پروگرام شروع ہوتے ہی بری طرح ناکام ہو چکا ہے۔مکمل چیک اینڈ بیلنس نہ ہونے کی وجہ سے صفائی کے نام پر فرضی خانہ پریاں کی جاتی ہیں۔جس کی وجہ سے ماہانہ کروڑوں روپے کے فنڈ صاف دیہات پروگرام کے نام پر خرد برد کئے جانے کے واضع امکانات نظر ہیں اور یہ کرپشن ڈی سی چکوال اور چیر مین طارق اسلم ڈھلی کی ناک کے نیچے ڈھرلے سے کرپشن کا بازار گرم ہے ، جس سے وہ لا علم نظر آرہے ہیں،صفائی کے باوجود متعدد گلیاں نالیاں اور دوسری گزرگاہیں گندگی سے ا ٹی پڑی ہیں اور کوڑا کرکٹ کے متعدد ڈھیر بھی جوں کے توں موجود ہیں ،جو کہ ناکام صفائی کا منہ بولتا ثبوت ہیں۔مزید بات کرتے ہوئے کہا کہ صفائی مہم کے دوران ان کا رویہ بھی عوام سے انتہائی تلخ ہوتا ہے۔جس سے واضع محسوس کیا جاسکتا ہے کہ یہ صفائی کراکے عوام پر احسان کر رہے ہیں۔ جو کہ انسانی توہین ہے،عوامی و سماجی حلقوں نے یونین کونسلوں کے چیر میں ،وائس چیر میں اور سیکرٹری گندگی کی ٹرالی کو مختلف جگہوں پر روک کر تصویر کشی کراکے شوشل میڈیا پر عوامی پزیرائی حاصل کرنے پر تحفظات کااظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ لگتا ہے کہ یہ صفائی مہم نہیں بلکہ تصاویری مہم ہے۔عوامی و سماجی حلقوں نے اعلی حکام سے اپیل کی ہے کہ اس مہم میں ہونے والی بت ضابطگیوں کا فوری نوٹس لے کر ان کے خلاف قانونی کاروائی کی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں