476

اقتدار کی چھتری ہٹتے ہی ن لیگ کے سابقہ ممبران اسمبلی اور موجودہ ن لیگی ٹکٹ ہولڈرز کو مشکلات کا سامنا،مذہبی جماعتوں کے ووٹر زنے بھی پی ٹی آئی اور ق لیگ کے اتحاد سے امیدیں وابستہ

تلہ گنگ (نمائندہ بے نقاب)اقتدار کی چھتری ہٹتے ہی ن لیگ کے سابقہ ممبران اسمبلی اور موجودہ ن لیگی ٹکٹ ہولڈرز ،سردار ممتاز خان ٹمن ،شہریار اعوان،سردار ذوالفقار دولہہ کو اپنے حلقوں میں انتخابی مہم چلانے میں مشکلات کا سامنا ،عوام ن لیگ کے تیس سالہ طویل ڈنگ ٹپاؤ دور اقتدار کے پروگرام کو رد کرتے ہوئے چودھری پرویز الہی ،

حافظ عمار یاسر اور سردار آفتاب اکبر کے گروپ میں شامل ہونا شروع ہوگئے ہیں ، حلقہ NA65پی پی23اور پی پی 24 پر کئے گئے خصوصی سروے کے دوران عوامی حلقوں کا کہنا تھا کہ ن لیگ نے ہمیشہ اپنے مفاد ات کی سیاست کی ہے ،عوام سے جھوٹے وعدوں پر ووٹ لے کر منتخب ہونے کے بعد ووٹروں کی امیدوں کو ردی کی ٹوکری کی نظر کر دیا جاتا ہے ،عوام کو لوڈ شیڈنگ،پینے کا صاف پانی کی عدم دستیابی،ناکافی سہولیات صحت و تعلیم،بد عنوانی اور کرپشن سمیت متعدد تحائف بھی ان کے دور اقتدار میں عوام کو دئیے گئے ہیں ،مزید کہنا تھا کہ اب عوام باشعور ہو چکی ہے،اب عوام کو مزید جھوٹ بول کر بے وقوف نہیں بنایا جا سکتا،2013کے الیکشن میں ووٹ کے حصول کے لئے حلقہ کی عوام کو دکھائے جانے والے ضلع،یونیورسٹی کے سہانے خواب پانچ سالہ دور اقتدار میں بھی حقیقت نہ بن سکے،اب ن لیگی حکمران کس منہ سے حلقہ کی عوام سے ووٹ مانگنے کا حق رکھتے ہیں ، اب عوام اپنے ووٹ کا استعمال ن لیگ کے خلاف کر ے گی ،خصوصی سروے کے دوران یہ بات بھی سامنے آئی ہے حلقہ میں مذہبی جماعتوں کے امیدواروں کی کمزور پوزیشن کو دیکھتے ہوئے ان مذہبی جماعتوں کے ووٹر زنے بھی پی ٹی آئی اور ق لیگ کے اتحاد سے امیدیں وابستہ کر لی ہیں ،

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں