354

حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کا عزت و احترام ہمارے ایمان کا حصَہ ہے،تمام اسلامی ممالک انبیاء کرام کی توہین کو جرم قرار دلوانے کیلئے اقوام متحدہ سے قانون سازی کا مطالبہ کریں،علماء کرام

تلہ گنگ ( نمائندہ بے نقاب )ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے خلاف ملک بھر کی طرح جے یو آئی ( ف )کے کی کال پر جمعہ کے روز ضلع چکوال میں بھی یو م احتجاج منایا گیا۔علمائے کرام نے نماز جمعہ کے اجتماعات میں احتجاجی قراردادیں منظور کروائیں اور اپنا بھرپوراحتجاج ریکارڈ کروایا ۔ قائد جمعیت کی کال پرچکوال، تلہ گنگ،چوآسیدن شاہ اور لاوہ کی مساجد میں علمائے کرام نے خطبات جمعہ میں ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کی شدید مذمت کرتے ہوئے شدید احتجاج اور غم و غصے کا اظہار کیا ہے۔مولانا عطاء الرحمن قاسمی ،پیر عبدالشکور نقشبندی ،

مولانا عبدالسلام ،مولانا عبداللہ ،مولانا علی خان ،مولانا اسد اللہ مولانا محمد عمر جھاٹلہ،قاری خبیب احمد سمیت متعدد علماء نے خاکوں کی اشاعت کے خلاف نماز جمعہ کے بعد احتجاج کیا گیا ہے۔اس موقع پر علماء اکرام کا کہنا تھا کہ وقت آگیا ہے کہ امت مسلمہ کو متحد ہوجانا چاہیئے ورنہ مغرب کی جانب سے مستقبل میں ہی اسی قسم کی نازیبا حرکتیں جاری رہیں گی، حرمت رسول کی حفاظت ہمارے دین کا حصہ ہے۔ہم سب کچھ قربان کریں گے مگر نبی کریم کی حرمت پر آنچ نہیں آنے دیں گے نام نہاد دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑنیو الے مغربی ملکوں کے حکمران شان رسالت میں گستاخیاں روکیں۔ عالمی سطح پر تمام انبیاء کی حرمت کے تحفظ کیلئے قانون سازی کی جائے۔ ایسا کرنے سے ہی دنیا میں حقیقی امن قائم ہو سکتا ہے تمام اسلامی ممالک انبیاء کرام کی توہین کو جرم قرار دلوانے کیلئے اقوام متحدہ سے قانون سازی کا مطالبہ کریں اور اگر اقوام متحدہ قانون سازی سے انکار کرے تو تمام اسلامی ممالک احتجاجاً اقوام متحدہ کی رکنیت چھوڑ دے۔انھوں نے امت مسلمہ اور اسلامی ممالک سے کہا کہ وہ متحد ہو کر مغربی ممالک کو ایسے دل آزار اقدامات پر معافی مانگنے پر مجبور کریں۔ہالینڈ سے سفارتی تعلقات کومنقطع کریں اوران کیخلاف عالمی قوانین کے مطابق توہین مذہب اورپیغمبراسلام کی شان میں گستاخی کانوٹس لیں اوران کے تمام مضوعات سے بائیکات کریں۔مغرب اور یورپ کا متعصبانہ اور اسلام دشمن رویہ دنیا کو تیسری عالمی جنگ میں جھونک سکتاہے۔ انہوں نے کہاکہ حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی ناموس پرمسلمان اپنی جانیں نچھاور کرنا سعادت سمجھتے ہیں۔ حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کا عزت و احترام ہمارے ایمان کا حصَہ ہے۔ مسلمان تمام انبیاء اورآسمانی کتابوں کا احترام کرتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ اس سے بڑی دنیا میں کوئی دہشتگردی نہیں ہوسکتی کہ کروڑوں انسانوں کو تکلیف پہنچائی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں