331

پاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی اور ڈپٹی کمشنر چکوال کے درمیان ٹھن گئی،17پٹواریوں اور گرداورز کے تبادلوں بارے جاری تحریری چٹھی پر انکار

چکوال(نمائندہ بے نقاب ) پاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی اور ڈپٹی کمشنر چکوال کے درمیان ٹھن گئی ہے۔ ڈپٹی کمشنر چکوال نے پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی کی طرف سے 17پٹواریوں اور گرداورز کے تبادلوں بارے جاری تحریری چٹھی پر انکار کر دیا ہے جبکہ تحصیل کلرکہار سے تحصیل چوآسیدنشاہ کیے جانے والے پانچ پٹواریوں کے تبادلے جو کہ عوام الناس کے بہترین مفاد میں کیے گئے ان کو رکن قومی اسمبلی کی طرف سے منسوخ کیے

جانے کی استدعا کو بھی ڈپٹی کمشنر نے مسترد کر دیا ہے ، ڈپٹی کمشنر غلام صغیر شاہد نے چیف الیکشن کمیشنر اسلام آباد رجسٹرارسپریم کورٹ آف پاکستان اور چیف سیکرٹری گورنمنٹ پنجاب کو لکھی جانے والی تحریری چٹھی میں بتایا کہ رکن قومی اسمبلی حلقہ این اے 64نے ایک کاغذ پر سر بمہر لفافے کے ذریعے 17پٹواریوں اور گرداورز کے تبادلے کرنے بارے لکھا اور پھر رکن قومی اسمبلی نے اپنے موبائل ٹیلی فون سے ان تبادلوں کو فوری طور پر کرنے بارے کہا ، بعدازاں اسسٹنٹ کمشنر چوآسیدنشاہ نے اپنے حلقے میں پانچ پٹواریوں کی کمی پورا کرنے بارے مجھے تحریری طور پر آگاہ کیا جس پر پانچ پٹواریوں کے تبادلے تحصیل کلرکہار ، تحصیل چوآسیدنشاہ کر دئیے گئے ۔ اس دوران میں رکن قومی اسمبلی نے ٹیلی فون پر یہ تبادلے فوری طورپر منسوخ کرنے کا حکم جاری کیا جس پر رکن قومی اسمبلی کو بتایا گیا کہ یہ انتظامی معاملات ہیں اس میں رکن قومی اسمبلی کا کوئی عمل دخل نہیں ، مگر رکن قومی اسمبلی کا رویہ تحکمانہ تھا میں دیکھتا ہوں کہ کون جیتے گا۔ ڈپٹی کمشنر نے چیف الیکشن کمشنر ، رجسٹرار سپریم کورٹ آف پاکستان اور چیف سیکرٹری پنجاب کو دی جانے والی درخواست میں استدعا کی ہے کہ قانون کے مطابق مذکورہ رکن قومی اسمبلی کے خلاف کاروائی کی جائے اور سرکاری معاملات میں ان کی مداخلت کو بند کیا جائے ، ڈپٹی کمشنر نے یہ کاپی کمشنر راولپنڈی ڈویژن کو بھی روانہ کر دی ہے۔ اُدھر ایم این اے سردار ذوالفقار علی خان کا موقف ہے کہ انہوں نے کوئی فہرست ڈپٹی کمشنر کو پٹواری اور گرداور کے تبادلے بارے فراہم نہیں کی البتہ کلر کہار سے چوآسیدنشاہ کیے جانے والے پٹواریوں کے تبادلوں پر میں نے ڈپٹی کمشنر کو آگاہ کیا کہ یہ لوگ بہتر کام کررہے ہیں ان کے تبادلوں سے عوام کو پریشانی ہوگی لہٰذا یہ تبادلے منسوخ کیے جائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں