367

سردار فیض ٹمن کی دستبرداری سے حلقہ بھر میں مسلم لیگ(ن)کے ورکرز بے چین،اعلیٰ قیادت کے حکم کے انتظار میں سیاسی سرگرمیاں ماند

لاوہ(تحصیل رپورٹر) سابق ایم این اے اور امیدوار حلقہ این اے پینسٹھ سردار فیض ٹمن کی دستبرداری سے حلقہ بھر میں مسلم لیگ(ن)کے ورکرز بے چین، مقامی قیادت بھی پریشانی کا شکار،

مسلم لیگ(ن) کی اعلیٰ قیادت کے حکم کے انتظار میں سیاسی سرگرمیاں ماند۔تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ(ن) کے امیدوار برائے این اے پینسٹھ سردار فیض ٹمن نے اچانک اپنے مدمقابل چوہدری شجاعت حسین کے حق میں دستبرداری کا فیصلہ سنادیا جس پر حلقہ بھر میں مسلم لیگ(ن) کے ورکرز اور مقامی قیادت شدید مشکلات کا سامنا کر رہی ہے۔سردار فیض ٹمن نے ایک بیان میں کہا کہ چونکہ مقامی لیگی قیادت نے الیکشن کمپین کیلئے آمادگی ظاہر نہ جس پر مایوس ہوکر سخت فیصلہ کیا ہے ۔جبکہ دوسری جانب حلقہ بھر سے سیاسی و سماجی حلقے سوشل میڈیا پر سردار فیض ٹمن کو شدید تنقید کا نشانہ بنائے ہوئے ہیں کیونکہ سرداران ٹمن نے این اے پینسٹھ پر ہمیشہ چوہدری پرویز الٰہی کے مقابلے میں ” پگ” کا نعرہ لگا کر عوامی ہمدردیاں سمیٹیں اور اپنے مد مقابل کو شکست سے دوچار کئے رکھا جبکہ قومی الیکشن 2018 میں سابق مشیر وزیر اعلیٰ پنجاب ملک سلیم اقبال کی ناقص حکمت عملی کیو جہ سے ضلع چکوال جوکہ مسلم لیگ(ن) کا گڑھ سمجھا جاتا تھا وہ اس بار مسلم لیگ(ن) کیلئے گڑھا ثابت ہوا اور ما سوائے ایک صوبائی اسمبلی کی سیٹ کے باقی تمام سیٹیں پاکستان تحریک انصاف اور ان کی اتحادی جماعت مسلم لیگ(ق) نے لیں۔اب سردار ممتاز ٹمن اور سردار فیض ٹمن دونوں کا مسلم لیگ(ق) میں ہونا مسلم لیگ(ن) کیلئے مزید پریشانی کا باعث ہے او ر چودہ اکتوبر کے ضمنی الیکشن میں مسلم لیگ(ن) کو سخت حالات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں