185

ضمنی معرکہ این اے پینسٹھ۔ …تحریر:امیر عبداﷲ ملک

قارئین! عزت و ذلت اس خالق حقیقی کے اس خالق کائنات کے ہاتھ میں ہے جو سمندر کی تہہ میں بھی چھپی مخلوق کو رزق پہہنچاتا ہے ۳۵سال تک مسلم لیگ(ن)شدید انتشار کا شکارہے بلکہ مسلم لیگ (ن)کے امید وار سردار فیض ٹمن میداں چھو ر چکے ہیں اس وقت شیر کی ڈھا ر کمز ور پڑ چکی ہے اور مسلم لیگ مقامی قائدین اپنے کئے پر سخت شرمندہ ہیں بلکہ بار تمام ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ نوازشریف نے سردار ممتازٹمن کو قومی الیکش میں ٹکٹ نہ دینے

پرمزکورہ کمیٹی کی نہ صرف لزونش کی ہے بلکہ سردار ممتازٹمن سے معزرت بھی کی ہے لیکناب بہت دیرہو چکی ہے لہزا مقامی قائدین غلط اور فیضی سیاست سے جو نفرت کا بیج بویاہے یہ اس کا نتیجہ ہے اب ضمنی الیکشن میں جہاں قائدین کو سخت شرمندگی کا سامنا ہے اسکا واضح ثبوت ملک شہریار اور ملک طارق ڈھلی ہے پریس کانفرنس کر کے اعتراف بھی کیا ہے وہاں ووٹر نئے گھونسلے تلاش کررہے ہیں لہذااب ٹریکٹر ہی چلے گاجبکہ مسلم لیگ (ق) کے چودھری بالک کے مقابلے میں تحریک لبیک کے میجریعقوب سیفی صاحب سینہ تانے کھڑے ہیں اور مسلم لیگ (ن) دبے لفظوں میجر یعقوب سیفی صاحب کی حمایت بھی کر رہی ہے لیکن اس سلسلہ میں سوائے سر دند منصور حیات ٹمن کے کئی بھی گروپ نے با ضابطہ حمایت کا اعلان نہیں کیا بہر حال یعنی سیفی صاحب نے یعنی کوپور مہم شروع کردی ہے اور جوابََا غورم کی طرف سے بھی کافی پذیرائی حل رہی ہے جبکہ مسلم لیگ اور پی ٹی آئی کے مشترکہ امیدوار چودھری مالک اپنے پڑاؤ لشکر کے ساتھ تلہ گنگ پہنچ چکے ہیں لیکن ابھی تک الیکشن مہم بھی کو ئی تیزی دیکھنے کو نہیں چلی اور پی ٹی آئی کے ورکر تو بالکل خاموش ہیں بلکہ اکثر غور سے سیاسی منظر پر نگاہ دوڑائی چائے تو گزشتہ بروز دندہ شاہ بلاول میں پی ٹی آئی کے رہنما فیصل ہمدانی نے نمثاۂہ دیا لمثائیہ میں رقم بھی جو موجودہے الدونس شدہ پی ٹی آئی کے رہنماؤں کی عدم شرکت نے بہت سارے سوالیہ نشان چھوڑے مجھے بہت سے پی ٹی آئی کے دوستوں سے ملنے کا موقع ملا جس میں بعض دوست تو یہ کہہ رہے تھے یہ پی ٹی آئی کافنگشن نہیں ہے اور یہ وہ لوگ ہیں جنہوں نے پی ٹی آئی کے مقابلے میں الیکشن لڑا ہے ،،گھنے،، کی نا کام کوشش ہے بلکہ اتحادی حمایت مسلم لیگ (ق) کے کار کنوں کو دعوت نہ دینا بھی ان کو عجیب لگا اور ایک عجیب صورتحال آئیں وقت دیکھنے کو ملا جب پی ٹی آئی کے ایک اور رہنما ملک یاسر دندہ کو اس لمثائیہ میں بھی بلایا نہیں گیااور بعد ازاں زولفقار دلہہ کے کہنے پر ملک یاسر دندہ فیڈرل میں تشریف لائے بہر حال یہ کہ پی ٹی آئی تلہ گنگ اور لاوہ میں شدید اختلاف ہیں اور مذکورہ ضمنی الیکشن عدم دلچسپی ہے جبکہ یوں سمجھے کہ مقابلہ براہِ راست مسلم لیگ (ق) اور تحریک لبیک میں ہی ہوگا اور اگر مسلم لیگ (ق)نے ضمنی الیکشن میں سر توڑ کو شش نہ کی تو خاموش ووٹ کے نتائج چودھری پرویز الہیااورسر دند فیض ٹمن کے ظورپر مانے رہیں گے جبکہ علاقہ بھر کے کھڑے پنج چودھری پرویز الہی کے ساتھ تھے اور سر دند فیض ٹمن اکیلے الیکشن جیت کر ایم این منتخب ہو گئے قارئین اس خاموش ووٹ کا کر دند تھا اور مسلم لیگ (ق) کے عدم دلچسپی سے نتائج کچھ بھی ہو سکتے ہیں قارئین کی دلچسپی کہنے سے عرض ہے کہ یہ پی ٹی آئی حکومت کو ۴۰ روز ہو چکے ہیں لیکن ابھی ٹیکسوں پہ ٹیکس لگائے جا رہے ہیں کوئی آپس میں کو ارڈینیشن نہ ہونے کی وجہ غورم کو تلیف ابھی نہیں حل ہو رہا اور ڈر ہے کہ کہ کہیں مولوی کا،، کچھا ہی نہ رہے ،،
کہتے ہیں کہ مسجد کے امام صاحب نیا جوڑا سلوایا درزی سے وعدہ کیا کہ کپڑے جمعرات تک شام پہنچ جائیں کیونکہ صبح جمعہ ہے اور جمعہ انشاء اﷲ نئے کپڑوں سے پڑھایا جائیگا ۔ حسب وعدہ درزی جمعرات شام کو سی کر لے آیا جب شام کواحتیاطاََ مولوی صاحب نئے کپڑے پہن کر چیک کیے تو پاجامہ بہت زیادہ لمبا تھا شر عََا نماز پڑھتے وقت شلوار یا پاجامہ ٹخنوں سے اوپر ہونا چاہیے لہذامولوی صاحب نے بیوی سے کہا کہ پائجامہ چار انچ ناپ کر کاٹ دیں بیوی کام کاج میں بھول گئی تو مولوی صاحب نے یہی بات اپنی بیٹی سے کہی بیٹی بھی مصروفیت کے باعث بھول گئی تو مولوی صاحب نے بہو سے کہا کہ کل جمعہ ہے اور پائجامہ تیار کردیں لیکن بہو بھی بھول گئی۔
دوسرے دن صبح جمعہ کو بیوی کو خیال آیا تو اس نے چپکے سے چار انچ پائجامہ کاٹ دیا کچھ ٹائم بعد بیٹی کو خیال آیا تو فوراً اٹھی کہ ابا ناراض ہونگے ۔بیٹی نے چار انچ پاجامہ دوبارہ سی دیا اور آرام سے بیٹھ گئی کو ادھ گھنٹہ گزرا تو بہو کو خیال آیا تو اس نے بھی فوراً پاجامہ مزید چار انچ کاٹ کرسی لیا اور استری کرکے تیار کر کے رکھ دیا۔جب مولوی صاحب جمعہ کی نماز کیلئے نہا دھوکر کپڑے پہنے تو وہ شلوار اب شلورا تو نہیں رہی بلکہ وہ ” انڈر وئر” یا دوسرے لفظوں میں ” کچھہ” کہہ لیں لہٰذا ابھی تو عوام کے ساتھ وہی مولوی صاحب والے شلوار والا کام ہورہا ہے دیکھئے اﷲ تعالیٰ بہتری فرمائے۔قارئین نیک تمناؤں کے ساتھ اجازت۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں