270

شہید ناموس صحابہؓ قاری سعید احمد شہید اہلسنت والجماعت کا سرمایہ تھے، ایسے لوگ کبھی کبھی پیدا ہوتے ہیں۔ مفتی توقیراحمد اور قاری نذیراحمد

تلہ گنگ (نمائندہ بے نقاب)شہید ناموس صحابہؓ قاری سعید احمد شہید اہلسنت والجماعت کا سرمایہ تھے،امت محمدیہ کی مظلومیت کا درد ان کے رگ وریشہ میں یپوست تھا وہ پورے ملک میں نظام خلافت راشدہ کاعملی نفاذ دیکھنا چاہتے تھے ایسے لوگ کبھی کبھی پیدا ہوتے ہیں۔

ان خیالات کا اظہارجامعہ علویہ حیدریہ تلہ گنگ کے ناظم اعلیٰ مفتی توقیراحمد اور قاری نذیراحمد نے شہید ختم نبوت و شہید ناموس صحابہؓ مولانا قاری سعید احمد شہید کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے21جنوری کو ہونے والا تحفظ نامو س رسالت ﷺسیمینار کی دعوتی مہم کے موقع پر غلہ منڈی تلہ گنگ کے تاجروں کو سیمینار میں شرکت کی دعوت دیتے ہوئے کیا ۔انہوں نے بتایا کہ شہید ختم نبوت و شہید ناموس صحابہؓ مولانا قاری سعید احمد شہید کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے21جنوری بروز اتواردن 12بجے تلہ گنگ میں تحفظ ناموس رسالت سیمینار ہوگاجس کے تمام انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں ، تمام انتظامات کو حتمی شکل دی گئی ،سیمینار تلہ گنگ میں چھوٹاشیل پمپ نزد جامع مسجد عائشہ صدیقہؓ کے قریب منعقد ہوگا جس میں صوبائی اسمبلی پنجاب جے یو آئی (ف) کے پارلیمانی لیڈر مولانا مسرور نواز ایم پی اے اور ملک بھر سے علماء کرام تشریف لا کر خطاب فرمائیں گے۔ سیمینار کے حوالہ سے انتظامات مکمل کر لیے گئے ہیں ۔مزید انہوں نے کہا کہ قاری سعید احمد شہیداہلسنت والجماعت کا سرمایہ تھے۔وہ ہر دلعزیزمذہبی رہنما تھے ان کی دینی‘ سماجی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا انہوں نے کبھی اپنے اصولوں سے کسی قسم کی سودے بازی نہیں کی اور نہ ہی کسی کے سامنے جھکے بلکہ اپنے اصولی فیصلوں پر ڈٹے رہے۔ قاری سعید احمد شہید کی شہادت سے ہم ایک مدبر‘ بہادر اور اسلام کے سچے سپاہی سے محروم ہوگئے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں