240

مسافر کوچز کے مالکان اور ڈرائیوروں نے ڈی پی او چکوال کے احکامات ہو امیں اڑا دئیے، حادثات کی شرع میں اضافہ ہونے کا خدشہ ۔

تلہ گنگ (چیف ایڈیٹر سے)مسافر کوچز کے مالکان اور ڈرائیوروں نے ڈی پی او چکوال کے حکامات کو ہو امیں اڑا دئیے،مسافر کوچز کی کی تیز رفتاری میں کمی نہ آسکی۔

تفصیلات کے مطابق میانوالی روڈ پر تیز رفتاری کے باعث ہونے والے حادثات کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی پی او چکوال نے مسافر کوچز کا دندہ شاہ بلاول سے بلکسر دو گھنٹوں کا ٹائم مقرر توکر دیا، لیکن ٹریفک پولیس کی نااہلی کی وجہ سے مسافر کوچز کے مالکان اور ڈرائیوروں نے ان احکامات کو ہوا میں اڑا دیا،ٹائم سے بچنے کے لئے کوچز مالکان نے فتح جنگ اور کوٹ چودھریاں روڈ کو اپنا روٹ بنا لیا ،کیونکہ ڈھوک پٹھان اور نیلہ دولہہ انٹر چینج پر ٹائم چیکنگ کے لئے کوئی چیک پوسٹ موجود نہیں ہے ،جس کی وجہ سے میانوالی روڈسمیت فتح جنگ روڈ اور کوٹ چودھریاں روڈ پر حادثات کی شرع میں اضافہ ہونے کا ایک بار پھرخدشہ پیدا کو چکا ہے۔ عوامی و سماجی حلقوں نے ڈی پی او چکوال سے فوری نوٹس لینے کی اپیل ۔عوامی وسماجی حلقوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ڈی پی او چکوال کا تیز رفتارمسافر کوچز کی رفتار میں کمی لانے کے لئے کئے جانے والے اقدام بھی مقامی ٹریفک پولیس انتظامیہ کی نااہلی کی بھینٹ چڑ ھ گیا،مناسب چیکنگ نہ ہونے کی وجہ سے اکثرمسافر کوچز نے اپنا روٹ کو ہی تبدیل کر دیا ہے ،مسافر کوچزنے تلہ گنگ سے فتح جنگ روڈ سے روالپنڈی اور دوسراکوٹ چودھریاں روڈ سے نیلہ دلہہ انٹر چینج کا راستہ اپنا لیا ہے ،اس کی سب سے بڑی وجہ دونوں جگہ پر چیک پوسٹ کا موجود نہ ہونا ہے ،جس کی وجہ سے شاہراہوں پر ایک بار پھر حادثات کی شرع میں اضافہ ہونے کا خدشہ ہے ،مزید بات کرتے ہوئے کہا کہ مناسب چیکنگ بھی نہ ہونے کہ وجہ سے مسافر کوچز ہوٹلوں اوراڈوں پر کھڑے اپنا فالتوٹائم صرف کردیتے ہیں۔پھر وہی تیز رفتار سے منزل کی جانب سفر شروع کر دیتے ہیں ،عوامی و سماجی حلقوں نے ڈی پی او چکوال سے اس مسئلے کا فوری نوٹس لینے کی اپیل کر تے ہوئے کہاکہ ڈھوک پٹھاں اور نیلہ دولہہ انٹرچینج پر چیک پوسٹ قائم کی جائے اورپرچی کو کمپوٹراز کیا جائے کیونکہ ہاتھ سے لکھی گئی پرچی میں ٹائم کی ردوبدل کیا جا سکتی ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں