250

تلہ گنگ میں غیر قانونی سرکاری سبز نمبری پلیٹوں کی بھر مار، انتظامیہ سے کاروائی کا مطالبہ۔

تلہ گنگ (نمائندہ بے نقاب)موٹر سائیکلوں ،گاڑیوں پر لگی پریس ،محکمہ ہیلتھ،محکمہ ایجوکیشن،محکمہ ایگریکلچرکے علاوہ دیگر محکموں کی سبز نمبر پیلٹیں قانو ن نا فذکرنے والے اداروں کے چیلج بن گئیں ۔ عوامی حلقوں کا قانون نافذ کرنے والے اداروں سے کاروائی کا مطالبہ

۔تفصیلات کے مطابق تحصیل تلہ گنگ میں غیر قانونی سبزنمبری پلیٹوں کا رواج چل نکلا ۔محکمہ ہیلتھ،محکمہ ایجوکیشن،محکمہ ایگریکلچرسمیت دیگرمحکموں کے افسرانوں سے لے کر کلاس فور تک کام کرنے والے افراد نے اپنی نجی گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں پرسبزنمبری پلیٹیں آویزاں کر رکھی ہیں ۔ کون سی سرکاری اور کون سی غیر سرکاری گاڑیاں ہیں ۔عوامی حلقوں کا قانون نافذ کرنے والوں سے سوال۔سروے کے دوران عوامی حلقوں کا کہنا تھا کہ موٹر سائیکلوں ،گاڑیوں پر لگی پریس ،محکمہ ہیلتھ،محکمہ ایجوکیشن،محکمہ ایگریکلچرکے علاوہ دیگر محکموں کی سبز نمبر پلٹیں قانو ن نا فذکرنے والے اداروں کے چیلج بن گئیں ہیں، محکموں میں کام کرنے والے افرادکواپنی نجی استعمال ہونے والی گا ڑیوں اور موٹر سائیکلوں پر سرکاری نمبر پلیٹ لگانے کی اجازت ہے؟ ۔اگرنہیں ہے تو انتظامیہ کوکاروائی کرنی چائیے ۔عوامی حلقوں کا مزید کہنا تھا کہ ٹریفک پولیس کے اہلکاراں ان غیر قانونی نمبر پلیٹ ہولڈر زکے خلاف قانونی کاروائی کی بجائے انہیں خصوصی پروٹوکول دیتے ہیں۔عوامی حلقوں کا مزید کہنا ہے کہ محکمہ ہیلتھ ،محکمہ ایجوکیشن میں کا م کرنے والے عملے اور ADCمین کا م کرنے والوں مکینک ۔ڈوزرآپریٹراور عملے نے کس حثیت سے سبز سرکاری نمبر پلیٹیں لگائی ہوئی ہیں ۔عوامی حلقوں نے اے ایس پی اکرام اللہ ،ڈی پی او چکوال اور اعلی حکام سے اپیل کی ہے کہ ان کے غیرقانونی سبز نمبر پلیٹ ہولڈرزگاڑیوں کے خلاف سخت قانونی کاروائی کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں