625

اسٹیڈیم میں غیر معیاری مٹیریل کا استعمال ایک کڑوڑ اسی لاکھ روپے کی بھاری گرانٹ کھوہ کھاتے، نگرانی کمیٹی کی مبینہ کرپشن پر خاموشی۔

تلہ گنگ (محمود علی شاکر ، اجمل اعوان ) بڈھیال زیر تعمیر اسٹیڈیم میں غیر معیاری مٹیریل کا استعمال ایک کڑوڑ اسی لاکھ روپے کی بھاری گرانٹ کھوہ کھاتے جانے کا اندیشہ اسٹیڈیم ٹھیکدار اور حواری نے صحت مندانہ سرگرمیوں کو پیٹ کا جہنم بھرنے کا زریعہ بنا لیا ہے سیاسی زمہ داران کی نگرانی کمیٹی کی مبینہ کرپشن پر خاموشی معنی خیز ہے ڈسٹرکٹ چکوال کی یونین کونسل نمبر ۶۵ موضع بڈھیال میں ایم پی اے ملک شہر یار اعوان کی جانب سے مختص کیے گیے اسٹیڈیم کے لیے ایک کڑوڑ اسی لاکھ روپے کو ٹھیکدار اور انکے حواریوں نے پیٹ کا دوزخ بھرنے کا زریعہ بنا لیا ہے

ناقص مٹیریل کا استعمال کیا جارہا ہے تفصیلات کے مطابق بڈھیال میں رفاع عامہ کی بڑی بن کی جگہ پر صحت مندانہ سرگرمیوں کے لیے اسٹیڈیم کی تعمیر میں انتہای ناقص اینٹوں سے دیوار تعمیر کی جا رہی ہے جبکہ سب انجینیر کی ملی بھگت سے سرکاری خزانہ کو ( تھک تھگڑی ) لگای جا رہی ہے اسٹیڈیم کی تعمیر کے لیے سیمنٹ ریت مٹیریل مکمل ناقص ہونے کے ساتھ ہی زیر تعمیر دیوار کی ترای کے لیے کوی واٹر ٹینک موقع پر موجود نہ ہے اسٹیڈیم کی کچی زمین میں معمولی کھڈا کھود کر پلاسٹک شیٹ میں سیمنٹ مٹیریل تیار کیا جارہا ہے سروے رپورٹ کے دوران توجہ دلانے پر ٹھیکدار کے منشی نے بھاگتے بھاگتے نزدیکی گھروں سے پلاسٹک پایپ کے ٹکڑے جوڑ کر ترای دیوار کا بندوبست ڈنگ ٹپاو پروگرام کا جوگاڑ بنا دیا کروڑوں روپے کے منصوبے پر ناقص مٹیریل کے ساتھ ساتھ ایک مستری اور تین مزدور کام کررہے تھے رفاع عامہ بن کی اسٹیڈیم بھرای کے لیے سافٹ مٹی کا استعمال بھی نا ہونے کے برابر ہے بڈھیال کے عوامی حلقوں نے مذکورہ ٹھیکدار کی اس مبینہ کرپشن کے خلاف اور اسے بلیک لسٹ کرنے کا مطالبہ کیا ہے اور کہا کہ کروڑوں روپے کے منصوبے میں شدید قسم کی بے ضابطگیاں سامنے آرہی ہیں موقع پر ٹھیکدار کے منشی نما شخص سے ٹھیکدار کے بارے میں معلوم کرنے پر اس نے کیا کہ ہمار ا کوی کچھ نہیں بگاڑ سکتا ہے اور ہم باقاعدہ محکمہ کو کمیشن دیتے ہیں اور بل ہماری مرضی کا بنتا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں