304

کٹاس راج کے چشمے کے خشک پانی او رسیمنٹ فیکٹریوں بارے سپریم کورٹ کے از خود نوٹس کیس سماعت.

چکوال(نمائندہ بے نقاب)کٹاس راج کے چشمے کے خشک پانی او رسیمنٹ فیکٹریوں بارے سپریم کورٹ کی طرف سے لیے جانے والے از خود نوٹس کی سماعت پیر کے روز سپریم کورٹ میں ہوئی، تین رکنی بینچ نے چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں سماعت شروع کی۔

عدالت کو بتایا گیا کہ سیمنٹ فیکٹریوں کے قیام کے بعد پورے علاقے میں زیر زمین پانی میں خاطر خواہ کمی ہوئی ہے۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے تمام متعلقہ محکموں جن میں انڈسٹری، معدنیات، ماحولیات اور دیگر محکمہ شامل ہیں ان کے تمام صوبائی سیکرٹریز اور وفاقی سیکرٹریز اگر ان میں سے کو ریٹائرڈ ہوچکے ہیں وہ بھی تین مئی کو حاضر ہوں اور بتائیں کہ سیمنٹ فیکٹریوں لگانے کی اجازت کس نے دی اور یہ کس قانون کے تحت لگائی گئی ہیں۔ ڈپٹی کمشنر چکوال غلام صغیر شاہد بھی عدالت میں موجود تھے جبکہ بیسٹ وے سیمنٹ کی طرف سے سر انور پرویز کے بھائی اور ڈی جی سیمنٹ کی طرف سے میاں رضا منشاء بھی عدالت میں حاضر تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں