192

حالیہ بجٹ میں پنشنرز کیساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک برقرار رکھا گیا ہے،سرحدوں کی حفاظت کرنے والے ڈاکخانوں اور بینکوں کے باہر ہر ماہ ذلیل و رسوا کیے جا رہے ہیں۔ کیپٹن (ر) مقبول حسین

چکوال(نمائندہ بے نقاب) پاکستان پنشنرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین کیپٹن (ر) مقبول حسین اور صوبیدار فتح نور میر نے بدھ کے روز بتایا کہ حالیہ بجٹ میں پنشنرز کیساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک برقرار رکھا گیا ہے اور ہاتھی کے دانت میں زیرہ والی بات ہے۔ون رینک ون پنشن کا اصول ہندوستان میں رائج ہے لہٰذا وطن کے بانیوں اور

محافظوں کی عزت افزائی کیلئے پنشن کا یہ مروجہ اصول اپنایا جائے۔ وہ چکوال پریس کلب میں حالیہ بجٹ میں پنشن کے حوالے سے اپنے تحفظات بارے آگاہ کر رہے تھے۔ اس موقع پر کیپٹن (ر) ملک افضل خیرپور،کیپٹن مختار ڈھڈیال، صوبیدار میجر غلام رضا بڈھیال، صوبیدار نصیر بٹ کریالہ، حوالدار غلام سلطان میانی، حولدار محمد اسلم میانی، ملک نصرت ڈھڈیال،سلطان احمد بٹ اور فیاض اکبرگجر بھی موجود تھے۔چیئرمین کیپٹن مقبول حسین نے مزید بتایا کہ بات پیسوں کی تو ضرور ہے مگر یہ ناانصافی اور توہین ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی سرحدوں کی حفاظت کرنے والے ڈاکخانوں اور بینکوں کے باہر ہر ماہ ذلیل و رسوا کیے جا رہے ہیں قوم کے ان محافظوں کیلئے بہتر پنشن اور پھر اس کی تقسیم پنشنرز کے گھروں کے اندر یقینی بنائی جائے۔ صوبیدار فتح نور میر نے کہا کہ شہیدوں اور غازیوں کی سرزمین ضلع چکوال میں شہیدوں اور غازیوں کے بچوں کیلئے کیڈٹ کالج چوآسیدنشاہ میں پچاس فیصد کوٹہ مقرر کیا جائے جبکہ ایک بڑا فوجی فاؤنڈیشن ہسپتال بھی ضلعی ہیڈ کوارٹر پر قائم کیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں