200

میاں محمد نواز شریف 2018کے الیکشن میں عوامی عدالت سے سرخرو ہو کر نکلیں گئے، سینئر راہنما ملک اسدعلی خان

تلہ گنگ (نمائندہ بے نقاب)میاں محمد نواز شریف 2018کے الیکشن میں عوامی عدالت سے سرخرو ہو کر نکلیں گئے ان خیالات کا اظہار پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئر راہنما ملک اسدعلی خان آف ڈھیر مونڈ نے “تلہ گنگ میڈیا ہاؤس”میں اخبار نوسیو ں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا

۔ان کا مزید کہنا تھا کہ حلقہ این اے 61سے سردار ممتاز خان ٹمن ایم این اے مسلم لیگ ن کیلئے لازم ہے 15سے 20ہزار ذاتی ووٹ بنک کی حامل شخصیت ہے لہذا حلقہ این اے 61سے 2018کے الیکشن میں انہیں نظر انداز نہیں کیا جا سکتا اگر نظر انداز کیا گیا تو 2018کے آمدہ الیکشن میں مسلم لیگ ن کیلئے مشکلات پیدا ہو نگی ملک اسد علی خان ڈھیر مونڈ نے کہا کہ دند ہ شاہ بلاول سے فوجی فاؤنڈیشن ہسپتال کو ختم کرکے ڈسپنسری بنا دیا گیا۔اس کا بین الصوبائی شاہرہ پر ہونے کیوجہ سے اسے ٹراما سنٹربھی بنایا جاسکتا تھا اس کو آپ گریڈ کرنے کے بجائے ڈسپنسری بنا دیا گیا انہو ں نے اس کیلئے ہر فارم پر آواز اٹھائی مگر کسی نے ساتھ نہیں دیا ملک اسد علی خان نے کہا تلہ گنگ کی لیڈر شپ میں اہلیت نہ تھی جسکی وجہ سے نہ تلہ گنگ ضلع بنا نہ سی پیک تلہ گنگ سے گزرا اور نہ ہی انڈسٹری ذون بن سکا اس موقع پر ملک جہانگیر خان ڈھیر مونڈ،چیف ایڈیٹر تلہ گنگ ٹائمزچوہدری غلام ربانی ،سید ارشاد حسین شاہ کاظمی ،عدیل جعفری ،چوہدر ی نذر حسین اور راشد عباس بھی موجود تھے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں