209

محکمہ ایجوکیشن میں نئے بھرتی ہونے والے ایجوکیٹرز کی میرٹ پالیسی پر والدین کا شدید احتجاج-۔

تلہ گنگ(نمائندہ بے نقاب) محکمہ ایجوکیشن میں نئے بھرتی ہونے والے ایجوکیٹرز کی میرٹ پالیسی پر والدین کا شدید احتجاج-تفصیلات کے مطابق والدین نے حکومت کی پالیسی پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ اب ہم اپنے بچیوں اور بچوں کو پاکستان کی سب سے اعلی پنجاب یونیورسٹی سے گریجویشن اور

ماسٹر نہیں کروایں گئیں کیونکہ ان کی مارکنگ سخت ہے اور وہ کم مارکس دیتے ہیں -وفاق المدارس میں گریجویشن اور ماسٹر کروایں گئیں جہاں پر خرچہ بھی نہیں ہے اور مارکس بھی اچھے ہوں گے میرٹ میں ہمارے بچے اور بچیاں آگے ہو کر ایجوکیٹر بھرتی ہو جائیں گئیں کیونکہ پنجاب یونیورسٹی ،قائداعظم یونیورسٹی میں تو مارکس نہایت کم ملتے ہیں کیونکہ وہاں پر مارکنگ پی ایچ ڈی یا ایم فل پروفیسر کرتے ہیں وفاق المدارس کے مدارس میں امتحان نہایت آسان ہے اور مارکس بھی اچھے ملتے ہیں اور ساتھ میں دینی تعلیم بھی مفت حاصل ہو جائے گی جو کہ آخرت میں کام آئے گئی اور دنیا آخرت دونوں میں فائدہ رہے گا-دوسرے سرکاری محکموں سے آنے والے سرکاری ملازمین نے اپیل کی ہے کہ تحصیل کے نمبر کم رکھے گئے ہیں گزشتہ ایجوکیٹر بھرتی میں یونین کونسل کے نمبر اس سے زائد تھے ان میں اضافہ کیا جائے دوسرے سرکاری محکموں سے آنے والے افراد کو بھی ترجیح لسٹ میں شامل کیا جائے کیونکہ وہ اپنی مستقل نوکری کو چھوڑ کو کنٹریکٹ پر اس لیے آ رہے ہیں کہ معاشرے میں اساتذہ کی عزت ہے اس لیے ان کو بھی میرٹ لسٹ میں ترجیح دی جائے اور ان کے سرکاری تجربے کو بھی مدنظر رکھا جائے-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں